آباد کار کے فرق میں جو آدمی پناہ چاہتا ہے وہ اپنی مرضی سے اور اقتصادی، فیملی یا تعلیمی وجہ سے اپنا وطن نہیں چھوڑتا ہے-

 

پناہ چاہنے والا یعنی asylum seeker وہی آدمی ہے جو زبردستی سے اپنا وطن چھوڑتا ہے کیوں کہ جنگ یا قدرتی تباہی کی وجہ سے وہاں اس کو تعاقب، بنیادی انسانی حقوقوں کی خلاف ورزی یا جان اور حفاظت کے خطرہ کا ڈر ہے-

 

ان وجہ سے وہ آدمی دوسرے ملک میں پناہ چاہتا ہے تاکہ وہ اپنے کو یا اپنی فیملی کو محفوظ کرے- انہیں وجہ سے قانون میں پردیسیوں کی رہائش کی ایک خاص اجازت پیدا کی گئی ہے جس کو “پناہ” یعنی asylum کہتے ہیں- یورپ میں رہائش کی یہ خاص قسم “بین الاقوامی پناہ” یعنی international protection کہلاتی ہے- اس کی بدولت جو لوگ مذکورہ بالا وجہ سے اپنا وطن چھوڑ کر بھاگتے ہیں ان کو رہائش کی ایسی خاص اجازت مل سکتی ہے – اس بات پر بھی کہ وہ قانونی ترک وطن کی ضرورتوں کے قابل نہیں ہیں (ان کے پاس مضبوط پاسپورٹ اور ویزا نہیں ہیں یا انہوں نے سرحدی جائزہ ڈیسک میں حاضر ہو کر سرحد کو پار نہیں کیا)-

 

یورپی اتحاد کے ملکوں کا ایک عام سسٹم ہے جس کے ذریعے وہ رہائش کی یہ خاص اجازت دیتے ہیں- یہ “پناہ کا عام یورپی نظام” یعنی Common European Asylum System ( (CEAS ہے- EU کے ملکوں میں جو آدمی پناہ و حفاظت چاہتا ہے اس کو “بین الاقوامی پناہ کے لئے امید وار” یعنی applicant for international protection کہتے ہیں-